ایل این جی :پاور پلانٹس کی نجکاری مارچ 2022ء تک کرنے کا فیصلہ

اسلام آباد: (رائل نیوز) وفاقی وزیر برائے نجکاری محمد میاں سومرو نے کہا ہے کہ ایل این جی پر چلنے پاور پلانٹس کی نجکاری مارچ 2022 تک کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔
سینیٹر شمیم آفریدی کی زیر صدارت سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے نجکاری کا اجلاس ہوا۔ نجکاری کمیشن بورڈ، کابینہ کمیٹی نجکاری اور کابینہ نجکاری کا فیصلہ کرتی، کسی بھی ادارے کی نجکاری کیلئے ڈیڑھ سے 2 سال کا وقت لگتا ہے، حکومتی ملکیتی اداروں کی کل تعداد 212 ہے۔ حکومتی اثاثے بیچ کر قرضوں کی ادائیگی کی جاتی ہے۔
وزیر نجکاری محمد میاں سومرو نے کہا کہ مختلف حکومتی اثاثوں پر قبضہ کیا گیا ہے اور کیسز عدالتوں میں ہیں۔ آئندہ 6 ماہ میں 3سے 4 اداروں کی نجکاری کا عمل مکمل کر لیا جائے گا۔
حکام نے بتایا کہ دس اداروں کا نقصان اداروں کے 90 فیصد نقصان کے برابر ہے، پاکستان میں ابھی تک کل 172 اداروں کی نجکاری ہو چکی ہے، نجکاری سے مجموعی طور پر 648 ارب روپے موصول ہوئے اور 90 فیصد قرضوں کی ادائیگی اور 10 فیصد غربت کے خاتمے کیلئے خرچ ہوتا۔ اجلاس میں اراکین کمیٹی نے کہا کہ پی ٹی سی ایل کے اثاثہ جات اونے پونے داموں فروخت کیے، نجکاری کے عمل کے مکمل ہونے پر ایسا ادارہ ہو جو شفافیت کا جائزہ لے۔
انوار الحق کاکڑ نے کہا کہ نجکاری بورڈ میں وہ لوگ تو نہیں جو خریدار کے مفادات کو تحفظ دیتے، کمیٹی نے نجکاری کمیشن ترمیمی بل 2021 کو آئندہ اجلاس تک موخر کردیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں