کابل میں پاک افغان ایکشن پلان برائے امن و استحکام کا دوسرا اجلاس

کابل میں پاک افغان ایکشن پلان برائے امن و استحکام کا دوسرا اجلاس ہوا جس میں پاکستان نے پر امن، مستحکم، متحد، خودمختار اور خوشحال افغانستان کے لیے عزم کا اعادہ کیا ہے۔
دفتر خارجہ کی جانب سے کابل میں ہونے والے پاک افغان ایکشن پلان برائے امن و استحکام کے جائزہ کے لیے دوسرے اجلاس کی تفصیلات جاری کر دی گئیں۔ افغانستان حکومت کی دعوت پرسکریٹری خارجہ سہیل محمود نے سینئر افسران پر مشتمل پاکستانی وفد کی سربراہی میں کابل کا دورہ کیا، افغان وفد کی قیادت نائب وزیر خارجہ نے کی۔

سکریٹری خارجہ نے افغان امن عمل کے لئے پاکستان کی مستقل حمایت سے آگاہ کیا اور اس بات کا اعادہ کیا کہ افغانستان میں تنازعہ کا کوئی فوجی حل نہیں ہے، جامع، وسیع البنیاد اور جامع سیاسی تصفیہ ہی آگے بڑھنے کا واحد راستہ ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں