Home / International / حاملہ خاتون کا ڈاکٹر کے پاس چیک اپ، دیکھنے کے بعد اس نے ایسی بات کہہ دی کہ
حاملہ خاتون کا ڈاکٹر کے پاس چیک اپ، دیکھنے کے بعد اس نے ایسی بات کہہ دی کہ

حاملہ خاتون کا ڈاکٹر کے پاس چیک اپ، دیکھنے کے بعد اس نے ایسی بات کہہ دی کہ

بھارت کا شمار صنفی امتیاز کے لحاظ سے دنیا کے سرفہرست ممالک میں ہوتا ہے، جہاں بیٹے کی خواہش تو ہر کوئی رکھتا ہے لیکن بیٹی کو اکثر لوگ صرف بوجھ خیال کرتے ہیں۔ بدقسمتی سے بھارت میں بیٹیوں کے لئے ناپسندیدگی اتنی شدت اختیار کرچکی ہے کہ اسے نفرت کہا جائے تو غلط نہ ہوگا۔ اس کی تازہ ترین مثال مغربی بنگال میں پیش آنے والا لرزہ خیز واقعہ ہے، جہاں ایک شخص کو جب پتہ چلا کہ اس کے ہاں بیٹی جنم لینی والی ہے تو اس نے وحشیانہ تشدد کرکے اپنی حاملہ بیوی کو ہی موت کے گھاٹ اتاردیا۔بیر بوم ڈسٹرکٹ پولیس کا کہنا ہے کہ یہ سفاکانہ واقعہ گزشتہ جمعہ کے روز پیش آیا۔ مقتولہ کے قریبی عزیزوں نے بتایا کہ اس کے قتل سے دو روز قبل اس کا خاوند اسے الٹراساﺅنڈ کروانے لے کر گیا تھا۔ جب اسے پتہ چلا کہ اس کی اہلیہ کے پیٹ میں بچی ہے تو وہ اس قدر مشتعل ہوا کہ حاملہ خاتون پر لاٹھی کے ساتھ تشدد شروع کردیا۔ بدقسمت خاتون کی نند اور ساس نے بھی اس پر تشدد کیا۔ ان بدبختوں نے مل کر اسے اتنے تشدد کا نشانہ بنایا کہ بیچاری جان سے ہی گزرگئی۔ واقعہ کا انکشاف ہونے کے بعد پولیس نے قاتل شوہر اور اس کی بہن کو گرفتار کرلیا ہے جبکہ ان کی والدہ مفرور ہے اور پولیس اسے تلاش کررہی ہے۔یاد رہے کہ بھارت میں یہ اس نوعیت کا پہلا واقعہ نہیں ہے ۔ اس سے پہلے بھی حاملہ خواتین کو اسی وجہ کی بناءپر قتل کرنے کے واقعات پیش آچکے ہیں۔ ملک کے طول و عرض میں یہ واقعات اتنی کثرت سے پیش آتے ہیں کہ حکومت نے قبل از پیدائش بچے کی جنس معلوم کرنے کو غیر قانونی قرار دے رکھا ہے۔ اس کے باوجود لوگ محض اس لئے الٹرساﺅنڈ کرواتے ہیں کہ بچے کی جنس جان سکیں۔ اگر انہیں پتہ چلے کہ حاملہ کے پیٹ میں بیٹی ہے تو فوری اسقاط حمل کی کوشش کی جاتی ہے۔ اگر اس میں کامیابی نہ ہو تو حاملہ خاتون کو قتل بھی کیا جاسکتاہے، جیسا کہ حالیہ واقعے میں ہوا۔

About editor editor

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

*

Scroll To Top