یہ بجٹ نئے پاکستان کے نظریے کی عکاسی کرے گا: وزیر اعظم پاکستان

اسلام آباد: وزیر اعظم پاکستان عمران خان نے بجٹ کے بعد قوم سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ وہ بجٹ ہے جو نئے پاکستان کے نظریے کی عکاسی کرے گا۔

تفصیلات کے مطابق پی ٹی آئی حکومت نے اپنا پہلا سالانہ بجٹ برائے 2019-20 پیش کیا، جس کے بعد وزیر اعظم نے قوم سے خطاب کیا، انھوں نے کہا میرے پاکستانیو، آج ہماری حکومت نے پہلا بجٹ پیش کیا ہے، یہ وہ بجٹ ہے جو نئے پاکستان کے نظریے کی عکاسی کرے گا۔

عمران خان نے کہا کہ نیا پاکستان مدینہ کی ریاست کے اصولوں پر بنے گا، یاد رکھنا پاکستان عظیم ملک بننے جا رہا ہے، افسوس ہے مدینے کی ریاست کے اصول مغربی دنیا میں ہیں، ریاست کا سربراہ جواب دہ ہے وہ قانون سے بالا نہیں ہے۔

وزیر اعظم نے کہا کہ میرا نظریہ پاکستان کے اوپر آ گیا، اب قوم اوپر اٹھے گی، یہ کوئی سوئچ نہیں جو عمران خان دبائے گا اور نیا پاکستان بن جائے گا، بڑے بڑے برج جو آج جیلوں کے اندر ہیں کوئی یہ سوچ بھی نہیں سکتا تھا۔

انھوں نے کہا کہ ماضی میں سپریم کورٹ کے ججز کو خریدا گیا، نیب کو ان دو جماعتوں نے مل کر بنایا تھا، لیکن جب سے ہماری حکومت آئی ہے تو جمہوریت ٹھیک سے نہیں چل رہی، دو مختلف نظریے جب پارلیمنٹ ہوتے ہیں تو جمہوریت چلتی ہے، پارلیمنٹ میں گفتگو ہوتی ہے تو ایک تسلسل بنتا ہے یہ جمہوریت کی خوب صورتی ہے، اپوزیشن پہلے دن سے تقریر نہیں کرنے دے رہی، میں نے ان کا کیا بگاڑا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں